1. دار الافتاء الاخلاص کراچی
  2. اذکار ودعائیں

قرض ادا کرتے وقت کی دعا

سوال

مفتی صاحب ! قرض ادا کرتے وقت کی دعا ارشاد فرمادیں۔

جواب

نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک صحابی سے چالیس ہزار قرض لیا، جب مال آیا، تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے قرض ادا کرتے ہوئے، قرض خواہ کو یہ دعا دی:


بَارَكَ اللَّهُ لَكَ فِي أَهْلِكَ وَمَالِكَ

ترجمہ: اللہ تمہارے گھر والوں اور مال میں برکت عطا فرمائے۔

(السنن النسائي، الِاسْتِقْرَاضُ، رقم الحديث: 4697)

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی السنن النسائی:

حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ عَلِيٍّ، قَالَ: حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ، عَنْ سُفْيَانَ، عَنْ إِسْمَعِيلَ بْنِ إِبْرَاهِيمَ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي رَبِيعَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ جَدِّهِ، قَالَ: اسْتَقْرَضَ مِنِّي النَّبِيُّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَرْبَعِينَ أَلْفًا، فَجَاءَهُ مَالٌ فَدَفَعَهُ إِلَيَّ، وَقَالَ: «بَارَكَ اللَّهُ لَكَ فِي أَهْلِكَ وَمَالِكَ، إِنَّمَا جَزَاءُ السَّلَفِ الْحَمْدُ وَالْأَدَاءُ»

(السنن النسائي، الِاسْتِقْرَاضُ، رقم الحديث: 4697، دارالمعرفۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی


ماخذ :دار الافتاء الاخلاص کراچی
فتوی نمبر :6431


فتوی پرنٹ