1. دار الافتاء الاخلاص کراچی
  2. اذکار ودعائیں

رات کو بیدار ہوتے وقت پڑھی جانے والی دعا

سوال

مفتی صاحب ! اگر رات کو بیدار ہو جائیں، تو کون سی دعا پڑھیں؟

جواب

جو شخص رات کو بیدار ہوجائے تو یہ دعا پڑھے:

لَا اِلٰہَ اِلَّا اللہُ وَحْدَہٗ لَا شَرِیْکَ لَہٗ، لَہُ الْمُلْکُ وَلَہُ الْحَمْدُ، وَھُوَ عَلیٰ کُلِّ شَيْ ءٍ قَدِیْرٌ۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ وَ سُبْحَانَ اللہِ وَ لَا اِلٰہَ اِلَّا اللہُ وَاللہُ اَکْبَرُ وَلَا حَوْلَ وَلَا قُوَّۃَ اَلَّا بِاللہِ .

ترجمہ: اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں، اس کا کوئی شریک نہیں، اسی کی بادشاہت ہے، اور اسی کی حمد و ثنا ہے، اور وہ ہر چیز پر قادر ہے۔ اللہ پاک ہے، اور حمد و ثنا اللہ ہی کے لئے ہے، اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں اور اللہ سب سے بڑا ہے ۔ طاقت اور قوت صرف اللہ ہی کے پاس ہے۔

(صحیح بخاری، باب فضل من تعار من اللیل فصلی، رقم الحدیث: 1154 )

فضیلت: حدیث شریف میں آتا ہے کہ جو شخص رات کو بیدار ہو کر مذکورہ دعا پڑھے، اس کے بعد اللھم اغفرلی پڑھے یا کوئی بھی دعا کرے تو اس کی دعا قبول کی جاتی ہے۔ پھر اگر وہ وضو کر کے (نماز پڑھے) تو نماز بھی قبول کی جاتی ہے۔

..................
دلائل:

کذا فی الصحیح البخاری:

حَدَّثَنَا صَدَقَةُ بْنُ الْفَضْلِ، أَخْبَرَنَا الْوَلِيدُ، عَنْ الْأَوْزَاعِيُّ قَالَ : حَدَّثَنِي عُمَيْرُ بْنُ هَانِئٍ قَالَ: حَدَّثَنِي جُنَادَةُ بْنُ أَبِي أُمَيَّةَ، حَدَّثَنِي عُبَادَةُ بْنُ الصَّامِتِ، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ , قَالَ : مَنْ تَعَارَّ مِنَ اللَّيْلِ فَقَالَ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ وَحْدَهُ لَا شَرِيكَ لَهُ لَهُ الْمُلْكُ وَلَهُ الْحَمْدُ وَهُوَ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ قَدِيرٌ ، الْحَمْدُ لِلَّهِ وَسُبْحَانَ اللَّهِ وَلَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ وَاللَّهُ أَكْبَرُ وَلَا حَوْلَ وَلَا قُوَّةَ إِلَّا بِاللَّهِ، ثُمَّ قَالَ اللَّهُمَّ اغْفِرْ لِي أَوْ دَعَا اسْتُجِيبَ لَهُ، فَإِنْ تَوَضَّأَ وَصَلَّى قُبِلَتْ صَلَاتُهُ.

(صحیح بخاری، باب فضل من تعار من اللیل فصلی، رقم الحدیث: 1154، دارالکتب العلمیۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی


ماخذ :دار الافتاء الاخلاص کراچی
فتوی نمبر :6408


فتوی پرنٹ