1. دار الافتاء الاخلاص کراچی
  2. وراثت اور وصیت

وراثت کی تقسیم کئی سال بعد ہو، تو اس میں کون سی قیمت کا اعتبار ہوگا؟

سوال

السلام علیکم، مفتی صاحب ! میرے والد صاحب کا جب انتقال ہوا، تب ہم سب بہت چھوٹے تھے، اس وقت سے لے کر آج تک میراث تقسیم نہ ہو سکی، تقریباً 20 سال کا عرصہ گزر گیا ہے، اب ہم کس اعتبار سے تقسیم کریں؟ رہنمائی فرمائیں۔ جزاک اللہ

جواب

صورتِ مسئولہ میں ترکہ موجودہ قیمت کے حساب سے تقسیم ہوگا۔

....................
دلائل:

کذا فی عمدۃ القاری:

المواريث فرائض وفروضا لما أنها مقدرات لأصحابها ومبينات في كتاب الله تعالى ومقطوعات لا تجوز الزيادة عليها ولا النقصان منها۔

(ج23، ص229، دار احیاء التراث العربی)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی


ماخذ :دار الافتاء الاخلاص کراچی
فتوی نمبر :6557


فتوی پرنٹ