1. دار الافتاء الاخلاص کراچی
  2. میت و جنازہ

تائی کو قبر میں اتارنے کا حکم

سوال

السلام علیکم، میرے بڑے بھائی کی بیگم کے لیے میرا بیٹا محرم ہے یا نہیں؟ اور اگر بڑے بھائی کی بیگم کا انتقال ہو جاتا ہے تو کیا میرا بیٹا پھر بھی محرم ہی رہے گا؟ کیا وہ میت کو دفناتے وقت مردے کو لحد میں اتار سکتا اور شکل دیکھ سکتا ہے؟

جواب

محض تائی ہونے کی وجہ سے کوئی عورت محرم نہیں بنتی ، لہذا آپ کے بیٹے کیلئے آپ کے بڑے بھائی کی بیوی نامحرم ہے ، اور انتقال کے بعد بھی غیرمحرم ہی رہے گی ، دیگر محارم کی موجودگی میں آپ کے بیٹے کے لئے انکی میت کو لحد میں اتارنا ، چھونا اور دیکھنا درست نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دلائل:

قال اللہ تبارک وتعالیٰ:

حُرِّمَتْ عَلَيْكُمْ أُمَّهَاتُكُمْ وَبَنَاتُكُمْ وَأَخَوَاتُكُمْ وَعَمَّاتُكُمْ وَخَالَاتُكُمْ وَبَنَاتُ الْأَخِ وَبَنَاتُ الْأُخْتِ وَأُمَّهَاتُكُمُ اللَّاتِي أَرْضَعْنَكُمْ وَأَخَوَاتُكُم مِّنَ الرَّضَاعَةِ وَأُمَّهَاتُ نِسَائِكُمْ وَرَبَائِبُكُمُ اللَّاتِي فِي حُجُورِكُم مِّن نِّسَائِكُمُ اللَّاتِي دَخَلْتُم بِهِنَّ فَإِن لَّمْ تَكُونُوا دَخَلْتُم بِهِنَّ فَلَا جُنَاحَ عَلَيْكُمْ وَحَلَائِلُ أَبْنَائِكُمُ الَّذِينَ مِنْ أَصْلَابِكُمْ وَأَن تَجْمَعُوا بَيْنَ الْأُخْتَيْنِ إِلَّا مَا قَدْ سَلَفَ ۗ إِنَّ اللَّهَ كَانَ غَفُورًا رَّحِيمًا

(سورہ : النساء ، آیت :23 )

قال فی الھدایہ:

و لا یجوز ان ینظر الرجل الی الاجنبیہ الا الی وجھھا و کفیھا ، فان کان لا یامن الشھوہ لا ینظر الی وجھھا الا لحاجہ ، و لا یحل لہ ان یمس وجھھا و کفھا و ان کان یامن الشھوہ

(ص:460 ، ج:4 ، ط: مکتبہ رحمانیہ)


واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی


ماخذ :دار الافتاء الاخلاص کراچی
فتوی نمبر :5691


فتوی پرنٹ