1. دار الافتاء الاخلاص کراچی
  2. وراثت اور وصیت

شوہر، 4 بیٹے اور 6 بیٹیوں کے درمیان ایک کروڑ کی تقسیم

سوال

کیا فرماتے ہیں علماء کرام اور مفتیان عظام اس مسئلے کے بارے میں کہ ایک عورت فوت ہوگئی، جس کی ملکیت میں 7 مرلے کا مکان ہے، جس کی قیمت ایک کروڑ ہے، وارث 4 بیٹے، 6 بیٹیاں اور خاوند ہے۔ براہ کرم ان ورثاء میں ایک کروڑ کی شرعی تقسیم فرمادیں۔ جزاک اللہ خیرا

جواب

مرحومہ کی تجہیز و تکفین، قرض کی ادائیگی اور اگر کسی کے لیے جائز وصیت کی ہو، تو ایک تہائی (1/3) میں وصیت نافذ کرنے کے بعد کل جائیداد کو چھپن (56) حصوں میں تقسیم کیا جائے گا، جس میں سے شوہر کو چودہ (14)، چار بیٹوں میں سے ہر ایک بیٹے کو چھ (6) اور چھ بیٹیوں میں سے ہر ایک بیٹی کو تین حصے ملیں گے۔

اس تقسیم کی رو سے ایک کروڑ (10000000) روپوں میں سے شوہر کو پچیس لاکھ (2500000)، ہر ایک بیٹے کو دس لاکھ اکہتر ہزار چار سو اٹھائیس روپے اور ستاون پیسے (10,71,428,57) اور ہر ایک بیٹی کو پانچ لاکھ پینتیس ہزار سات سو چودہ روپے اور انتیس پیسے (5,35,714,29) ملیں گے۔


۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

قال اللہ تعالیٰ:

یوصیکم اللہ فی اولادکم للذکر مثل حظ الانثیین...الخ
(سورۃ النساء، الایۃ11)

فان کان لھن ولد فلکم الربع مما ترکن ...الخ
(سورة النساء، الآیة: 12)



واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی


ماخذ :دار الافتاء الاخلاص کراچی
فتوی نمبر :5057


فتوی پرنٹ