1. دار الافتاء جامعہ اشرفیہ لاہور
  2. کتاب الطلاق

باب الظہار بیوی کو ’’ماں‘‘ کہہ دینے سے نکاح کا حکم

سوال

تقریباً ۱۰ سال قبل میں نے بیوی کو غصے میں کہہ دیا تھا کہ ’’میری ماں بس بھی کرو‘‘ اس وقت مجھے اس کے نتائج کے متعلق کوئی علم نہ تھا۔ بہرحال ہم خوش و خرم زندگی بسر کر رہے ہیں مجھے ابھی ابھی معلوم ہوا ہے کہ اسلام میں تو ایسا کہنا سخت ممنوع ہے۔ مہربانی فرما کر میری رہنمائی فرمائیں کہ مجھے کیا کرنا چاہیے؟

جواب

ظہار کی نیت کے بغیر بیوی کو ’’ماں‘‘ کہنے سے نکاح پر کوئی فرق نہیں پڑتا۔ البتہ ایسا کہنا مکروہ ہے۔ ویکرہ قولہ انت امی ویا ابنتی ویااختی ونحوہ۔ الدرالمختار علی ھامش ردالمحتار ۳/۴۷۰"


ماخذ :دار الافتاء جامعہ اشرفیہ لاہور
فتوی نمبر :309


فتوی پرنٹ