1. دار الافتاء جامعہ اشرفیہ لاہور
  2. کتاب الطھارۃ

جرابوں پر مسح کا حکم

سوال

جرابوں پر مسح جائز ہے یا نہیں جواب مرحمت فرمائیں۔

جواب

آجکل کی مروجہ جرابیں جو کاٹن اور سوت کی بنی ہوتی ہیں ان پر مسح کرنا شرعاً جائز نہیں۔

وقد ذکر نجم الدین الزاھدی عن شمس الائمۃ الحلوانی ان الجوارب خمسۃ انواع من المرغزی والغزل والشعر والجلد الرقیق والکرباس۔ قال فذکر التفاصیل فی الاربعۃ من الثخین والرقیق والمنعل وغیر المنعل والمبطن وغیر المبطن واما الخامس فلایجوز المسح علیہ کیف ماکان انتھی۔ (کبری: ص ۱۱۹)


ماخذ :دار الافتاء جامعہ اشرفیہ لاہور
فتوی نمبر :882


فتوی پرنٹ