1. دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
  2. عبادات
  3. نماز
  4. جماعت / امامت

حنفی امام کا وتر کی نماز دو سلام کے ساتھ پڑھانے کا حکم

سوال

حنفی امام کا کسی دوسرے مذہب کے مطابق وتر کی امامت کرنا کیسا ہے؟  کیا ایسا کرنے سے وتر ہو تے ہیں یہ نہیں؟

جواب

اگر حنفی امام وترپڑھاتے ہوئے تین رکعت وتر ایک سلام کے بجائے دو سلام کے ساتھ پڑھائے تو اس کا حکم یہ ہے کہ ایسا کرنے سے نہ تو اس حنفی امام کے وتر ادا ہوں گے اور نہ ہی اس کے مقتدیوں کی نماز وتر ادا ہوگی۔ حنفی مسلک سے تعلق رکھنے والے کے لیے حنفی طریقے کے  مطابق ہی (ایک ہی سلام کے ساتھ تین رکعت ) وتر کی نماز پڑھنی لازمی ہے۔فقط واللہ اعلم


ماخذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
فتوی نمبر :144008201508
تاریخ اجراء :25-05-2019

فتوی پرنٹ