1. دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
  2. حقوق و معاشرت
  3. لباس / وضع قطع
  4. پردے کے احکام

سالی سے پردہ

سوال

بہن نکاح میں ہو توسالی کابہنو ئی سے کسی حد تک پردہ ہے بھی یا نہیں؟ یا کوئی نرمی ہے؛ کیوں کہ ہم سے کسی نے کہا ہے: جب تک بہنوئی سے نکاح نہیں  ہوسکتا تب تک پردہ نہیں؟

جواب

جب تک بہن نکاح میں ہے اس وقت تک سالی سے نکاح حرام ہے، مگر چوں کہ سالی سے ہمیشہ کے لیے نکاح حرام نہیں ہے؛ اس لیے وہ اجنبیہ کی طرح ہےاوراس سے  پردہ واجب ہے۔ جیسا کہ تمام منکوحہ عورتوں سے (جب تک وہ کسی کے نکاح میں ہوں) نکاح حرام ہے، لیکن وقتی طور پر نکاح حرام ہونے سے پردے کا حکم ختم نہیں ہوتا، اسی طرح سالی سے پردے کا حکم بھی باقی رہے گا۔ لہٰذا  اس سے ہنسی مذاق کرنا، تنہائی میں ساتھ رہنا اور بے پردہ سامنے آنا جائز نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم


ماخذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
فتوی نمبر :144004201198
تاریخ اجراء :14-02-2019

فتوی پرنٹ