1. دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
  2. حقوق و معاشرت
  3. باہمی حقوق
  4. اولاد کے حقوق

نومولود بچے کے کان میں اذان دینے کا طریقہ

سوال

نومولود بچے کے کان میں اذان دینے کا طریقہ بتا دیجیے!

جواب

نومولود کے کان میں اذان دینے کا عمل نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت ہے، اس بارے میں قولی وفعلی دونوں طرح کی احادیثِ مبارکہ موجودہیں، چناں چہ  ترمذی شریف کی روایت میں ہے:

’’حضرت عبیداللہ بن ابی رافع اپنے والد سے نقل کرتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو حسن بن علی کی ولادت کے وقت ان کے کان میں اذان دیتے ہوئے دیکھا جس طرح نماز میں اذان دی جاتی ہے‘‘۔

 امام ترمذی رحمہ اللہ اس حدیث کو نقل فرماکر لکھتے ہیں:یہ حدیث صحیح ہے اور اسی پر عمل کیا جاتا ہے۔ 

بچے کے کان میں اذان دینے کا طریقہ یہ ہے کہ بچے کوہاتھوں پراٹھاکر قبلہ رخ کھڑے ہوکر دائیں کان میں اذان اوربائیں کان میں اقامت کہی جائے اورحسبِ معمول ’’حی علی الصلوۃ‘‘  کہتے وقت دائیں طرف اور ’’حی علی الفلاح‘‘  کہتے وقت بائیں طرف منہ پھیراجائے۔فقط واللہ اعلم


ماخذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
فتوی نمبر :144010200418
تاریخ اجراء :27-06-2019

فتوی پرنٹ