1. دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
  2. معاملات
  3. بیع / تجارت
  4. اجارہ اور کرایہ کے احکام

کمپیوٹر کے ذریعے دوسروں کے موبائل یا میموری کارڈ وغیرہ میں فلمیں اور گانے وغیرہ ڈالنے اور اس کی اجرت لینے کا حکم

سوال

کمپیوٹر کے ذریعے دوسروں کے موبائل یا میموری کارڈ وغیرہ میں فلمیں اور گانے وغیرہ ڈال کر ان سے پیسے لینا کیسا ہے؟ اور کیا گانے اور فلمیں ڈال کر دینے کے پیسے دکان کے کرائے میں دینا جائز ہے؟

جواب

کمپیوٹر کے ذریعے سے لوگوں کو موبائل یا میموری کارڈ وغیرہ میں فلمیں اور گانے وغیرہ ڈال کر دینا سخت گناہ کا کام ہے، وہ لوگ جب تک ان فلموں اور گانوں کو دیکھتے اور سنتے رہیں گے تو اس ڈالنے والے کو برابر گناہ ملتا رہے گا ؛ اس لیے اس کام سے مکمل اجتناب کرنا چاہیے، چوں کہ یہ ایک گناہ کا کام ہے اس لیے اس کام کے بدلہ پیسے وصول کرنا بھی جائز نہیں ہے۔ اور ان پیسوں سے نہ تو دکان کا کرایہ ادا کرنا جائز ہے اور نہ ہی کسی بھی قسم کا استفادہ کرنا جائز ہے۔ فقط واللہ اعلم


ماخذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
فتوی نمبر :144001200729
تاریخ اجراء :27-10-2018

PDF ڈاؤن لوڈ