1. دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
  2. حقوق و معاشرت
  3. نکاح / طلاق
  4. تین طلاقیں

تین طلاق کو ایک طلاق سمجھنا

سوال

میری بہن جوکہ 3بچوں کی ماں ہے دو بیٹے ایک بیٹی سب سے چھوٹی بھی 13 سال کی ہے ان سب کے سامنے میرے بہنوئی نے غصے میں آ کر میری بہن کو طلاق دے دی تھی ایک ہی بار میں تین بار طلاق کہ دیا ہے اب وہ فتوی ڈھونڈ رہا ہے کہ یہ ایک ہی گنی جاۓ گی یاں تین اکٹھی میرے بہنوئی اہل حدیث ہیں اور بہن السنت والجماعت سے ہے اپ مہربانی کر کے بتا دیں اس مسئلے کا نتیجہ کیا ہے ؟

جواب

اہل سنت والجماعت اورائمہ اربعہ کے اجماع  کے مطابق شوہر کے تین مرتبہ طلاق کہہ دینے کی وجہ سے بیوی پر طلاق مغلظہ   (ناقابل رجوعتین طلاق) واقع ہوچکی ہے، اب دونوں کا ساتھ رہنا جائز نہیں ہے، نیز شوہر کے اہل حدیث ہونے سے اس پر کوئی فرق نہٰیں پڑتا ۔


ماخذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
فتوی نمبر :144007200276
تاریخ اجراء :23-03-2019

فتوی پرنٹ