1. دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
  2. معاملات
  3. وراثت / وصیت
  4. استحقاق اور عدم استحقاق وراثت

کیا والد کی زندگی میں وفات پانے والے بیٹے کی اولاد کا میراث میں حصہ ہے؟

سوال

اگر بیٹا باپ سے پہلے فوت ہو جائے توبیٹے کی اولاد وراثت میں حصہ دار ہے یا نہیں؟

جواب

اگر بیٹے کا انتقال والد کی زندگی میں ہوجائے تو دیگر بیٹوں کی موجودگی میں مرحوم بیٹے کی اولاد کو بطورِ وراثت حصہ نہیں ملتا، البتہ اگر دیگر ورثا عاقل و بالغ ہوں اور وہ برضا و خوشی مرحوم بیٹے کی اولاد کو حصہ دیں تو ایسا کرنا جائز اور باعثِ ثواب ہے۔

فتاوی شامی میں ہے:

"وشروطه ثلاثة: موت مورث حقيقةً أو حكمًا كمفقود أو تقديرًا كجنين فيه غرة، ووجود وارثه عند موته حيًّا حقيقةً أو تقديرًا كالحمل، والعلم بجهل إرثه". ( كتاب الفرائض ٦/ ۷۵٦ ط:سعيد)فقط واللہ اعلم


ماخذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن
فتوی نمبر :144106200299
تاریخ اجراء :03-02-2020

PDF ڈاؤن لوڈ