1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. سود و انشورنس

گھر کے لیے بینک سے قرض لینا؟

سوال

گھر کے لیے بینک سے قرض لینا؟

جواب

Fatwa: 856-648/M=07/1443

 صورت مسئولہ میں اگر بینك سے سودی قرض لینا مراد ہے تو اس سے احتراز كرنا چاہئے‏، حدیث میں سودی لین دین پر لعنت آئی ہے‏، آپ كی تنخواہ ماشاء اللہ 80 ہزار روپئے ہے تو ا س میں سے ہر ماہ ضروری خرچ كے علاوہ رقم بچاكر جمع كرتے رہیں اور تھوڑا صبر و ہمت سے كام لیں ان شاء اللہ كچھ مدت میں نظم ہوجائے گا۔

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :610180
تاریخ اجراء :03-Mar-2022

فتوی پرنٹ