1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. دیگر معاملات

کسی پر جھوٹا مقدمہ قائم کرنا؟

سوال

کسی پر جھوٹا مقدمہ قائم کرنا؟

جواب

Fatwa: 1015-784/L=8/1443

 اسلام میں جھوٹا مقدمہ كرنا یا جھوٹی گواہی دینا سخت ناجائز ہے ؛ اس لیے اگر وہ مولوی صاحب واقعی جھوٹا مقدمہ كرتے رہتے ہیں تو ان كا یہ فعل انتہائی برا ہے ، ان كو اس سے باز رہنا ضروری ہے ، اور آپ ہر نماز كے بعد تین مرتبہ خود بھی اس دعا كو پڑھتی رہیں اور اپنے شوہر كو بھی كہیں كہ وہ بھی اس كو پڑھتے رہیں ان شاء اللہ اس مشكل سے نجات ملے گی ، دعا یہ ہے:«اللَّهُمَّ إِنَّا نَجْعَلُكَ فِي نُحُورِهِمْ، وَنَعُوذُ بِكَ مِنْ شُرُورِهِمْ»

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :610283
تاریخ اجراء :10-Mar-2022

فتوی پرنٹ