چاچی‏، ممانی اور بڑی امی سے پردے كا كیا حكم ہے؟

سوال کا متن:

چاچی‏، ممانی اور بڑی امی سے پردے كا كیا حكم ہے؟

جواب کا متن:

Fatwa: 1223-1038/B=11/1443

 (1)                اگر فاتحہ لگانے سے مراد مروجہ فاتحہ ہے یعنی كھانا یا شیرینی وغیرہ سامنے ركھ كر ہاتھ اٹھاكر فاتحہ پڑھنا تو یہ بدعت ہے‏، شریعت میں اس كا كوئی ثبوت نہیں ہے۔ (تالیفات رشیدیہ‏، ص: 143‏، ط: اسلامیات لاہور)۔

(2)              لمٹ كے پیسوں سے كونسے پیسے مراد ہیں؟ اور آپ كے والد ان سے كیا كاروبار كرتے ہیں؟

(3)              آپ كے لیے اپنی چاچی‏، ممانی اور بڑی امی (تائی) سے پردہ كرنا لازم ہے‏، اور اگر وہ پردہ نہ كریں تو نگاہیں نیچی ركھیں‏، اور ان كی خلوت سے بچیں۔

(4)              اس نیت سے بھی كلمہ پڑھنا درست ہے۔

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :611974
تاریخ اجراء :21-Jun-2022