1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. دیگر معاملات

ایک کی مشین دوسرے کی محنت اور نفع میں شرکت کیا یہ درست ہے؟

سوال

ایک آدمی دوسرے آدمی کو پیسہ دیتاہے کہ گنے والی مشین خریدکرچلاوجومنافع ہوگا وہ نصف نصف یعنی مشین ایک آدمی کی جبکہ کام دوسرے آدمی اورمنافع میں دونوں شریک ہوں گے ۔کیاایساکرناجائزہے ؟اگرجائزنہیں توکونسی صورت حلال اور جواز کی ہے ؟

جواب

بسم الله الرحمن الرحيم
Fatwa:927-804/D=9/1439
سوال میں مذکور صورت درست نہیں ہے، البتہ اگر کام کرنے والے شخص سے مشین کا کرایہ طے کرلیا جائے تو درست ہے کرایہ خواہ ماہانہ ہو یا روزانہ کے حساب سے یا جتنے گھنٹے چلے گی ہرگھنٹہ کے اعتبار سے طے ہو سب طرح سے جائز ہے۔
واللہ تعالیٰ اعلم
دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :161445
تاریخ اجراء :Jun 4, 2018

فتوی پرنٹ