1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. سود و انشورنس

کسانوں کوجو لون دی جارہی ہے مہاراشٹر گورنمنٹ نے اس پر سود معاف کیا ہے لیکن رقم لوٹاتے وقت وہ سود کی رقم وصول کرکے آنے والے سال واپس اپنے اکاوٴنٹ میں سود کی رقم آجاتی ہے۔ ایسی صورت میں جب کہ ہم کو سود کچھ دنوں تک سود کی رقم

سوال

کسانوں کوجو لون دی جارہی ہے مہاراشٹر گورنمنٹ نے اس پر سود معاف کیا ہے لیکن رقم لوٹاتے وقت وہ سود کی رقم وصول کرکے آنے والے سال واپس اپنے اکاوٴنٹ میں سود کی رقم آجاتی ہے۔ ایسی صورت میں جب کہ ہم کو سود کچھ دنوں تک سود کی رقم ادا کرنی پڑتی ہے۔

جواب


بسم الله الرحمن الرحيم Fatwa ID: 1533-1520/N=1/1436-U
آپ کے یہاں مہاراشٹر میں صوبائی حکومت کی جانب سے زراعت کی ترقی کے لیے کسانوں کے لیے لون کی جو اسکیم آئی ہے اس میں چوں کہ سود معاف کیا گیا ہے اس لیے یہ شرعی اعتبار سے غیرسودی قرض کی صورت ہے، اور اس میں رقم لوٹاتے وقت سود کے نام سے جو پیسہ لیا جاتا ہے وہ شرعی اعتبار سے سود اس لیے نہیں ہے کہ اس میں واپسی کی شرط ہوتی ہے پس وہ بحکم قرض ہے، سود نہیں، الحاصل سوال میں مذکور قرض کی اسکیم جائز ہے، اس سے نفع اٹھانے کی گنجائش ہے۔
واللہ تعالیٰ اعلم
دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :53818
تاریخ اجراء :Nov 9, 2014

PDF ڈاؤن لوڈ