1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. عبادات
  3. صلاة (نماز)

فجر کی نماز میں اگر ہمارے پاس دو رکعت سنت پڑھنے کی گنجائش نہ ہو اور ہم صرف دو رکعت فرض پڑھ لیں ، تو کیا ہمیں اس کے بعد دو رکعت سنتوں کی قضا پڑھنا ضروری ہوگا؟ کیوں کہ وہ تو سنت موٴکدہ ہے۔

سوال

فجر کی نماز میں اگر ہمارے پاس دو رکعت سنت پڑھنے کی گنجائش نہ ہو اور ہم صرف دو رکعت فرض پڑھ لیں ، تو کیا ہمیں اس کے بعد دو رکعت سنتوں کی قضا پڑھنا ضروری ہوگا؟ کیوں کہ وہ تو سنت موٴکدہ ہے۔

جواب

بسم الله الرحمن الرحيم
(فتوى:  439/ن = 481/ن)
  جی ہاں! سورج طلوع ہونے کے بعد زوال سے پہلے پہلے ان کی قضاء کرلی جائے۔ ولا یقضیھا إلا بطریق التبعیة لقضاء فرضھا... وأما إذا فاتت وحدھا فلا تقضی قبل طلوع الشمس بالإجماع... وأما بعد طلوع الشمس بالإجماع... وأما بعد طلوع الشمس فکذلك عندھما وقال محمد: أحبّ إلي أن یقضیھا إلی الزوال... قیل ھذا قریب من الاتفاق (در مع رد المحتار: ۲/۵۱۲، ط زکریا دیوبند)
واللہ تعالیٰ اعلم
دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :1072
تاریخ اجراء :Jul 14, 2007

PDF ڈاؤن لوڈ