1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاشرت
  3. ماکولات و مشروبات

حلال جانوروں کے حرام اعضاء کی بیع و شراء جائز ہے کہ نہیں؟

سوال

بعدہ عرض یہ کہ حلال جانوروں کے حرام اعضاء کی بیع و شراء جائز ہے کہ نہیں؟

جواب

بسم الله الرحمن الرحيم
Fatwa : 658-591/M=06/1440
حلال جانوروں کے ممنوع اعضاء میں سے دَم (خون) کی بیع و شراء ناجائز ہے بقیہ اعضاء جیسے پتہ، مثانہ، غدود وغیرہ اِن کا کھانا مکروہ ہے لیکن دوا ، علاج کے طور پر ان کے استعمال کی گنجائش ہے اس لئے ان کی بیع و شراء، ناجائز نہیں۔ والحاصل أن جواز البیع یدور مع حل الانتفاع (شامی) ویجوز بیع لحوم السباع والخمر المذبوحة فی الروایة الصحیحة (ہندیة) ۔
واللہ تعالیٰ اعلم
دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :168850
تاریخ اجراء :Feb 28, 2019

PDF ڈاؤن لوڈ