1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. سود و انشورنس

مسجد اور مدرسہ کا پیسہ بینک میں رکھنا کیسا ہے ؟

سوال

مسجد اور مدرسہ کا پیسہ بینک میں رکھنا کیسا ہے ؟

جواب

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 814-598/B=09/1441


بینک میں چونکہ سودی لین دین ہوتا ہے اس لئے مقدس مسجد اور دینی مدرسہ کا پیسہ نہ رکھنا چاہئے ۔ لیکن جب ایسا دَور آجائے کہ ایک آدمی بھی قابل اعتماد نہ ملے جس کے پاس مسجد و مدرسہ کی رقم امانت رکھی جا سکے تو بدرجہ مجبوری بغرض حفاظت مسجد و مدرسہ کا پیسہ بھی بینک میں رکھ سکتے ہیں۔ اس میں جو کچھ انٹرسٹ کی رقم ملے وہ بلانیت ثواب بہت زیادہ غیریب و پریشان لوگوں کو دیدی جائے۔

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :178302
تاریخ اجراء :May 14, 2020

PDF ڈاؤن لوڈ