1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. وراثت ووصیت

والدہ کی رقم سے لی گئی جائیداد كا حكم؟

سوال

والدہ کی رقم سے لی گئی جائیداد كا حكم؟

جواب

Fatwa : 269-194/B=03/1442

 اگر والد مرحوم نے اپنی حیات میں سوتیلی والدہ کو مہر نہیں دیا ہے تو یہ مہر والد مرحوم کے ذمہ قرض ہے جس کا ادا کرنا ضروری ہے۔ اور والد مرحوم نے اپنی ملکیت میں جو زمین و مکان چھوڑا ہے اس کی پوری قیمت موجودہ لگائی جائے، اسی طرح وہ زیورات جو والد کی طرف سے سوتیلی ماں کو دیے گئے ہیں والد ہی ان کے مالک ہیں ان کی قیمت بھی لگائی جائے اُن سب میں سے آٹھواں حصہ سوتیلی والدہ کو دیدیا جائے اور باقی ماندہ دونوں بھائیوں میں برابر برابر تقسیم کردیا جائے اور جو رقم پینشن کی ہے وہ آپ دونوں بھائیوں کو برابر برابر ملے گی۔ اس میں سوتیلی ماں کا کوئی حصہ نہ ہوگا۔

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :600859
تاریخ اجراء :14-Nov-2020

فتوی پرنٹ