1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. معاملات
  3. وراثت ووصیت

شوہر كی حیات میں شوہر كی پروپرٹی میں بیوی كا كچھ حصہ ہےیا نہیں؟

سوال

شوہر كی حیات میں شوہر كی پروپرٹی میں بیوی كا كچھ حصہ ہےیا نہیں؟

جواب

Fatwa:220-185/N=4/1442

 آپ کے شوہر کے پاس اُن کی اپنی کمائی کا جو گھر ہے اور وہ کرایہ پر دیا ہوا ہے، وہ تو صرف آپ کے شوہر کا ہے، اُس میں آپ کے شوہر کی حیات میں آپ کا کوئی حصہ نہیں ہے؛البتہ آپ کے شوہر کو وراثت میں جو گھر اور دکان ملی ہے اور دونوں میں آ پ کے شوہر کے بھائی بہنوں کا جو حصہ تھا، اس کی قیمت آپ نے اپنی ذاتی رقم سے ادا کی ہے،اس میں اگر آپ نے شوہر کے بھائی بہنوں کا حصہ اپنے لیے خریدا ہے تو وہ خرید کردہ حصہ آپ کی ملکیت ہوگا اور آپ اس کے بہ قدر اپنے شوہر کے ساتھ اُس گھر اور دکان میں شریک وساجھے دار ہوں گی۔ اور اگر وہ حصہ آپ کے شوہر نے اپنے لیے خریدا ہے اور آپ نے اپنے شوہر پر احسان کرتے ہوئے اُن کی جانب سے پیسے اداکیے ہیں یا وہ پیسے آپ نے شوہر کے ذمے قرض رکھے ہیں تو ان دونوں صورتوں میں گھر اور دکان میں آپ کی کوئی ساجھے دار نہ ہوگی؛ البتہ قرض کی صورت میں آپ اپنے شوہر سے قرضے کی رقم واپس لینے کی حق دار ہوں گی۔

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :601251
تاریخ اجراء :22-Dec-2020

فتوی پرنٹ