1. دار الافتاء دار العلوم دیوبند
  2. عبادات
  3. صلاة (نماز)

مسافت شرعی كی ابتدا گھر سے ہوگی یا شہر کے حدود سے؟

سوال

مسافت شرعی كی ابتدا گھر سے ہوگی یا شہر کے حدود سے؟

جواب

Fatwa : 385-293/H=05/1442

 شہر مردان کی آبادی کے ایک کنارہ سے دوسرے کنارہ تک اگرچہ پچاس (50) کلو میٹر ہے مگر اِس مسافت کا اعتبار نہیں ہے دوسرے کنارہ کی آبادی سے جب باہر نکلیں گے وہاں سے مسافت محسوب ہوگی ۔ پس صورت مسئولہ میں شہر مردان میں واقع اپنی جائے سکونت والے مکان سے یا ایک کنارہ سے دوسرے کنارہ تک یا اندر اندر ایک جگہ سے دوسری جگہ تک کوئی شخص سفر کرے تو اس کا اعتبار نہ ہوگا اس لئے شہر مردان سے حیات آباد تک سفر کرنے والا شخص قصر نہ کرے گا اور صرف ایک دن اور ایک رات مسح علی الخفین کرے گا اور افطار کی رخصت اس کے حق میں نہ ہوگی من خرج من عمارة موضع اقامتہ من جانب خروجہ وان لم یجاوز من الجانب الآخر اھ در مختار وفی رد المحتار قال فی شرح المنیہ فلا یصیر مسافرا قبل ان یفارق عمران ما خرج منہ من الجانب الذی خرج ․․․․․․․ اذ المعتبر جانب خروجہ اھ (ص: 1/524، مطبوعہ: نعمانیہ ، اول باب صلاة المسافر)۔

واللہ تعالیٰ اعلم

دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم دیوبند
فتوی نمبر :601435
تاریخ اجراء :28-Dec-2020

فتوی پرنٹ