1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. حج و عمرہ

السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ۔ میرا سوال ہے کہ میں پچھلے سال عمرہ کو گیا تھا دو عمرے کئے پھر جب طائف زیارت کے لئے گیا تو وہاں سے احرام نہیں باندھا کیونکہ مجھے اس بات کا کچھ بھی علم نہیں تھا تو میں بغیر احرام کے ہی مکہ

سوال

السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ۔ میرا سوال ہے کہ میں  پچھلے سال عمرہ کو گیا تھا دو عمرے کئے پھر جب طائف زیارت کے لئے گیا تو وہاں سے احرام نہیں باندھا کیونکہ مجھے اس بات کا کچھ بھی علم نہیں تھا تو میں بغیر احرام کے ہی مکہ گیا، تو کیا مجھ پر دم ہے؟ اگر ہے تو مجھے وہاں بھی پتہ نہیں چلا تو اب میں انڈیا میں ہوں،تو وہ دم میں کیسے دوں؟ اور اس بات کو بھی قریب  ای ڈیڑھ سال ہوگئے۔اس مسئلہ کا حل بتائیں۔

جواب

Ref. No. 40/875

الجواب وباللہ التوفیق 

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔ جب آپ کا عمرہ ہوگیا تھا اور دوبارہ مکہ جانا عمرہ کے ارادہ سے نہیں تھا تو آپ پر احرام کے ساتھ جانا ضروری نہیں تھا، اس لئے مذکورہ صورت میں آپ پر کوئی دم وغیرہ واجب نہیں ہے۔

واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند

 


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :1424
تاریخ اجراء :Oct 12, 2018,

فتوی پرنٹ