1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. متفرقات

کیا کوئی وقت ایسا بھی ہے جس میں ہاتھ اٹھاکر یا بغیر ہاتھ اٹھائے دعا مانگنا ناجائز ہو۔

سوال

Ref. No. 38 / 1166

کیا کوئی وقت ایسا بھی ہے جس میں ہاتھ اٹھاکر یا بغیر ہاتھ اٹھائے دعا مانگنا ناجائز ہو۔

جواب

Ref. No. 38 / 1147

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                                                                                        

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔  دعاء کے لئے نہ تو کوئی وقت متعین ہے اور نہ ہی ممنوع ہے۔ ادعوا ربکم تضرعا وخفیۃ سے معلوم ہوا کہ ہاتھ اٹھاکر دعاء مانگناتضرع کی ایک شکل ہے اس لئے اس کی بھی ممانعت نہیں، البتہ لازم  نہ سمجھنا چاہئے  اور دعاء کے آداب کو ملحوظ رکھنا چاہئے۔ واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :922
تاریخ اجراء :Aug 8, 2017,

فتوی پرنٹ