1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. متفرقات

السلام علیکم ہے، قرآن و حدیث سے بھینس کی حلت نہیں ملتی، کیا یہ بات صحیح ہے کہ بھینس کو فقہ نے حلال کیا ہے؟

سوال

السلام علیکم
 ہے، قرآن و حدیث سے بھینس کی حلت نہیں ملتی، کیا یہ بات صحیح ہے کہ بھینس کو فقہ نے حلال کیا ہے؟

جواب

Ref. No. 39 / 875

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                                                                                        

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔ قرآن کریم میں لفظ ”بقر“ استعمال ہوا ہے جس کے معنی گائے، بیل اور بھینس کے ہیں۔ یعنی لفظ بقر  کا اطلاق گائے ، بیل اور بھینس سب پر ہوتا ہے۔ اس لئے اس کا ثبوت قرآن سے ہی ہوا۔  البتہ فقہ نے اس کو باہر نکال کر مسئلہ کو واضح کردیا ہے۔   

    واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :1050
تاریخ اجراء :Dec 23, 2017,

فتوی پرنٹ