1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. طلاق و تفریق

علماء کیا فرماتے ہیں کہ امتیاز نے کہا کہ اگر میرا نکاح ام زرین کے علاوہ کسی اور لڑکی سے کیا گیا تو اس کو تین طلاق ۔ تو کیا طلاق ہوجائے گی۔ اگر طلاق ہوگئی اور اس کے بعد ام زرین کا نکاح کسی اور کے ساتھ ہوگیا یا ام زرین انتق

سوال

Ref. No. 38/836

علماء کیا فرماتے ہیں کہ  امتیاز نے کہا کہ اگر میرا نکاح ام زرین کے علاوہ کسی اور لڑکی سے کیا گیا تو اس کو تین طلاق ۔ تو کیا طلاق ہوجائے گی۔ اگر طلاق ہوگئی اور اس کے بعد ام زرین کا نکاح کسی اور کے ساتھ ہوگیا یا ام زرین انتقال کرگئی تو ایسی صورت میں کیا امتیاز کسی اور سے نکاح کرسکتا ہے؟

جواب

Ref. No. 38/827

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                                                                                        

بسم اللہ الرحمن الرحیم: بشرط صحت سوال ایسی صورت میں  اگر ام زرین کے علاوہ کسی اور سے نکاح کیا گیا تو اس منکوحہ پر طلاق واقع ہوجائے گی۔ اب اگراس کے بعدام زرین کے علاوہ  کسی دوسری لڑکی سے  نکاح کیا  تو یہ نکاح درست ہوگا۔ اس کا شرطیہ جملہ صرف پہلے عقد سے متعلق ہوگا۔

۔واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :766
تاریخ اجراء :Oct 27, 2016,

فتوی پرنٹ