1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. مساجد و مدارس

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ میں ایک مدرسے کا مہتمم ہوں/مجھے ایک ضروری مسٔلہ دریافت کرنا ہے ۔ بسااوقات مدرسے سے طلبہ فرار ہو جاتے ہیں ۔ اور سامان(بستر پیٹی پیسے وغیرہ) چھوڑ جاتے ہیں۔ تو کیا حکم ہے انکے پیسوں کا۔ کہ مہی

سوال

Ref. No. 1294

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
میں ایک مدرسے کا مہتمم ہوں/مجھے ایک ضروری مسٔلہ دریافت کرنا ہے ۔
بسااوقات مدرسے سے طلبہ فرار ہو جاتے ہیں ۔ اور سامان(بستر پیٹی پیسے وغیرہ) چھوڑ جاتے ہیں۔ تو کیا حکم ہے انکے پیسوں کا۔ کہ مہینوں لینے نہیں آتے تو ان کا کیا کیا جائے۔

جواب

Ref. No. 1255

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                           

بسم اللہ الرحمن الرحیم-:  ان طلبہ کے سامان آپ کے پاس امانت ہیں ، ان کا سامان ان کے گھروں پر بھیج دیا جائے، یا ان کے گھر رابطہ کرکے ان کو مدرسہ کے دیگر طلبہ پر خرچ کرنے کی اجازت لے لی جائے۔ بغیر ان کی مرضی کے خرچ کرنا یا اپنے استعمال میں لانا درست نہیں ہے۔ واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :466
تاریخ اجراء :Oct 7, 2015,

PDF ڈاؤن لوڈ