1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. نکاح و شادی

ایک عورت کا حلالہ ہوا، صبح میں دوسرے شوہر نے طلاق دے دیا، اب پہلے شوہر سے نکاح کرنے کے لیے لوگ اصرار کررہے ہیں، تو کیا دوسرے ہی دن نکاح کرسکتے ہیں؟ اگر کرلیا تو کیا نکاح منعقد ہوجایے گا۔ کیا ایسا کرسکتے ہیں کہ نکاح کرلیں

سوال

ایک عورت کا حلالہ ہوا، صبح میں دوسرے شوہر نے طلاق دے دیا، اب پہلے شوہر سے نکاح کرنے کے لیے لوگ اصرار کررہے ہیں،   تو کیا دوسرے ہی دن نکاح کرسکتے ہیں؟ اگر کرلیا تو کیا نکاح منعقد ہوجائے گا۔ کیا ایسا کرسکتے ہیں کہ نکاح کرلیں اور رخصتی عدت کے بعد ہو؟  جزاک اللہ۔ شہباز

جواب

 

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                           

بسم اللہ الرحمن الرحیم-:  شوہر ثانی کے طلاق دینے کے بعد عدت لازم ہے، عدت  کے اندر نکاح درست نہیں ہے۔ عدت کے اندر نکاح کرنے والے اور اس نکاح میں شرکت کرنے والے سب گناہ کبیرہ کے مرتکب ہوں گے، اس لئے ہرگز ایسا نہ کیا جائے۔ عدت کے ختم ہونے کا انتظار کرنا ضروری ہے۔ واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :444
تاریخ اجراء :Aug 29, 2015,

فتوی پرنٹ