1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. احکام میت / وراثت و وصیت

السلام علیکم ورحمة اللہ اگرکسی عورت کاانتقال ہوجائےاور ایسی جگہ پرہوکہ کوئی پہچانتانہ ہواور شناخت کرنےکاکوئی بھی ذریعہ نہ ہو نہ لباس سے نہ وضع سے جیساکہ آج کےدور میں پہچاننامشکل ہوتاہےتوایسی صورت میں کیاجائیگااگر شریعت مین

سوال

Ref. No. 851

السلام علیکم ورحمة اللہ
اگرکسی عورت کاانتقال ہوجائےاور ایسی جگہ پرہوکہ کوئی پہچانتانہ ہواور شناخت کرنےکاکوئی بھی ذریعہ نہ ہو نہ لباس سے نہ وضع سے جیساکہ آج کےدور میں پہچاننامشکل ہوتاہےتوایسی صورت میں کیاجائیگااگر شریعت مین کوئی شناخت کاطریقہ ہوتوبتائیں
فروغ احمد

جواب

Ref. No. 846

الجواب وباللہ التوفیق                                                                                         

بسم اللہ الرحمن الرحیم-:  اگر کسی طرح کا کوئی نشان نہ ہو تو اگر مسلمانوں کے علاقہ میں پائی جائے یا ایسے علاقہ میں جہاں مسلمانوں کی کثرت ہو تو اس کو مسلمان ہی سمجھا جائے گا، اور اسکی جنازہ کی نماز پڑھ کر مسلمانوں کے قبرستان میں  تدفین کردی جائے گی۔

واللہ تعالی اعلم  بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :526
تاریخ اجراء :Dec 6, 2015,

فتوی پرنٹ