1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. زکوۃ / صدقہ و فطرہ

اگرکوئی زکوة کی رقم کسی مولانا کو دیدے اور پھر مولانا سے وہ رقم چوری ہوجائے یا کھو جائے، توکیا زکوة دینے والے کی زکوة ادا ہوجائے گی یا دوبارہ دینی ہوگی؟ اسی طرح اگر زکوة کی رقم الگ کر کے رکھ لی اور ابھی غریب کو نہیں دی

سوال

Ref. No. 1172

 اگرکوئی زکوة کی رقم کسی مولانا کو دیدے اور پھر مولانا سے وہ رقم چوری  ہوجائے یا کھو جائے، توکیا زکوة دینے والے  کی زکوة ادا ہوجائے گی یا دوبارہ دینی ہوگی؟ اسی طرح اگر زکوة کی رقم الگ  کر کے  رکھ لی اور ابھی غریب کو نہیں دیا تھا کہ  وہ رقم چوری ہوگیر تو کیا حکم ہے؟ باحوالہ بتائیں۔ ابوبکر

جواب

Ref. No. 1238 Alif

الجواب وباللہ التوفیق

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔   مذکور فی السوال دونوں صورتوں میں مزکی کی زکوة ادا نہیں ہوگی، اور اس کو دوبارہ زکوة نکالنی ہوگی۔ ولا یخرج عن العہدة بالعزل بل بالاداء للفقراء قال الشامی فلوضاعت لاتسقط عنہ الزکوة ولومات کانت میراثا عنہ۔ کذا فی الشامی۔  واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :369
تاریخ اجراء :Jul 6, 2015,

فتوی پرنٹ