1. دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
  2. مساجد و مدارس

کھرگون شہر میں اسلامپور محلہ میں رفع یدین والے لوگ نماز پڑھنے کے لئے مسجد میں آتے ہیں ۔ لیکن دیگر افراد انہیں مسجد میں نماز پڑھنے سے روکتے ہیں۔ اسی تعلق سے کچھ لوگوں نے کھرگون جماعت کو ایک خط لکھا ہے اور اس میں سورہ بقرہ

سوال

کھرگون شہر میں اسلامپور محلہ میں رفع یدین  والے لوگ نماز پڑھنے کے لئے مسجد میں آتے ہیں ۔ لیکن دیگر افراد انہیں مسجد میں نماز پڑھنے سے روکتے ہیں۔  اسی تعلق سے کچھ لوگوں نے کھرگون جماعت کو ایک خط لکھا ہے اور اس میں سورہ بقرہ کی ایت کا حوالہ دیا ہے کہ اس سے بڑا ظالم کون ہوگا جو اللہ کی مسجد میں اللہ کے ذکر کو روکے۔ اس تعلق سے علما کرام کیا فرماتے ہیں؟ اس کا فتوی چاہئے

جواب

Ref. No. 41/860

الجواب وباللہ التوفیق 

بسم اللہ الرحمن الرحیم:۔ کسی بھی مسلمان کو مسجد میں نماز پڑھنے سے روکنا بڑا گناہ ہے۔ رفع یدین بعض ائمہ کا مسلک ہے ، اس کو انتشار کا موضوع نہیں بنانا چاہئے۔ البتہ جو لوگ رفع یدین کرتے ہیں وہ دوسروں کو اس کی تبلیغ نہ کریں  اور دیگر حضرات رفع یدین کرنے والوں کو نہ روکیں ، تاہم اگر فساد کا اندیشہ ہو تو ان کو سمجھادینا چاہئے کہ وہ دوسری مسجد میں نماز پڑھ لیا کریں۔

واللہ اعلم بالصواب

 

دارالافتاء

دارالعلوم وقف دیوبند


ماخذ :دار الافتاء دار العلوم (وقف) دیوبند
فتوی نمبر :1787
تاریخ اجراء :Oct 21, 2019

فتوی پرنٹ